پاکستان میں شرح خواندگی خطرناک حد تک کم ہے۔ 2017 میں شائع ہونے والی اے ایس ای آر(ASER) رپورٹ کے مطابق پاکستان کی مجموعی تعلیم کا اسکور 67.96 ہے۔ ملک میں ہر سال 3 ملین طلبہ کے اضافے کو مد نظررکھتے ہوئے کم از کم فی گھنٹہ تین نئےاسکولوں کی تعمیر درکار ہے۔ معیاری تعلیم کی فراہمی کیلئے پرعزم ، ٹی ڈی ایف (TDF) نے کئی باضابطہ تعلیمی اداروں کا آغاز کیا جن میں کے ایس بی ایل (KSBL) ، ڈی پی ایس (DPS)، ڈی سی ای ٹی (DCET)، ایم ڈی ایس وی  اے ڈی(MDSVAD)، لمس میں احمد داؤد چیئر اور ایف جی داؤد پبلک اسکول مظفر آباد سمیت کئی نام شامل ہیں۔

ہمارے تعلیمی منصوبے